سمارٹ لاک ڈائون کی پالیسی پھر کامیاب کورونا کیسز میں کمی آنے لگی

لاہور، کراچی ، واشنگٹن(نیوز ڈیسک) صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ اسمارٹ لاک ڈاؤن کے اثرات نظر آنا شروع ہوگئے ہیں اور لاہور میں کورونا کے پھیلاؤ میں آہستہ آہستہ کمی آرہی ہے ،لاہور میں ایس او پیز کی خلاف ورزی پر جرمانے بھی کیے جارہے ہیں۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پنجاب میں کورونا ٹیسٹ کی تعداد میں اضافہ کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لاک ڈاؤن کرتے ہیں تو معیشت کا پہیہ رکتا ہے

،سکولوں سے متعلق دو روز بعد اجلاس ہے جس میں کوئی فیصلہ کیاجائے گا۔دوسری جانب کراچی میں گزشتہ ہفتے کورونا وائرس کی مثبت آنے کی شرح 4.05فیصد ریکارڈ کی گئی۔محکمہ صحت کے مطابق گزشتہ ہفتے حیدرآباد میں کورونا وائرس کی مثبت آنے کی شرح4.79فیصد ریکارڈ کی گئی۔ گزشتہ ہفتے سندھ کے دیگر شہروں میں کورونا وائرس کی مثبت آنے کی شرح1.60فیصد ریکارڈ کی گئی۔گزشتہ ہفتے کے دوران 59630 کورونا کے ٹیسٹ کیے گئے۔ 1599 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔دریں اثنا امریکا میں سائنسدانوں نے دعویٰ کیا ہے کہ کورونا سے صحتیاب افراد کے لیے فائزر اور موڈرنا ویکسین کی ایک ہی ڈوز کافی ہے۔امریکا کے مہرے میڈیکل کالج کے سربراہ اور فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن ایڈوائزری کمیٹی میں خدمات سرانجام دینے والے ڈاکٹر جیمز ہلڈریتھ نے کہا کہ ایک تحقیق کے مطابق وہ لوگ جوپہلے ہی کورونا سے صحتیاب ہو چکے ہیں ان کیلئے فائزر اور موڈرنا ویکسین کی ایک ہی ڈوز کافی ہے۔ڈاکٹر جیمز ہلڈریتھ کے مطابق یہ ایک ڈوز بھی ایسے افراد میں آئندہ کیلئے بہتر قوت مدافعت پیدا کر دیتی ہے اس لیے انہیں دوسری ڈوز دینا ویکسین کو ضائع کرنے کے برابر ہے۔ماہرین کے مطابق کروڑوں افراد کورونا سے ازخود صحتیاب ہو چکے لہٰذا انہیں 2 ڈوز لگوانے سے بہتر ہے کہ ویکسین انہیں دی جائیجو اس کے زیادہ مستحق ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں